چوآ سیدن شاہ شہر و گردونواح میں مسافروں اور دیگر ٹرانسپورٹ استعمال کرنے والی عوام کی جانیں داؤ پر لگ گئیں ۔ ان

No Photo

چوآ سیدن شاہ (ملک عظمت حیات سے ) چوآ سیدن شاہ شہر و گردونواح میں مسافروں اور دیگر ٹرانسپورٹ استعمال کرنے والی عوام کی جانیں داؤ پر لگ گئیں ۔ انتظامیہ خاموش ۔ چوآ سیدن شاہ والدین کے طلباء و طالبات کے والدین نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ مختلف سکولوں اور کالجوں کے طلباو طالبات کو لانے اور لیجانے پر معمور ویگنوں، ہائی ایسز، کیری ڈبوں میں غیر معیاری ناقص سی این جی اورایل پی جی سلنڈر نصب ہیں ان پرائیویٹ گاڑی مالکان نے اپنے ذاتی منافع کی خاطر طلباو طالبات اور دیگر مسافروں کی زندگیوں کو داؤ پر لگا رکھا ہے، چند روز قبل ہی مسافر وین میں نصب ناقص سلنڈر پھٹنے سے 5 قیمتی جانیں ضائع ہوگئیں تھیں۔مسافروں کا کہنا ہے کہ ’’سڑک کنارے ڈیرہ جمائے ’’طوطا استاد‘‘ جیسے مکینک اپنی مہارت کے جوہر دکھاتے ہوئے کم پیسوں میں سلینڈر فٹ کر دیتے ہیں اور گاڑی مالکان بھی اس چیز سے بے خبر رہتے ہیں کہ سلینڈر کی فٹنگ میں کیانقص رہ گیا ہے اور کیا نہیں۔ نتیجہ وہی نکلتا ہے جو اوپر درج ہے یعنی ناگہانی اموات۔ناقص سی این جی فٹنگ کے ذمہ دار صرف کاریگر ہی نہیں بلکہ گاڑی مالکان بھی ہیں جو تھوڑے سے پیسوں کی خاطر اپنی اور دوسروں کی جان خطرے میں ڈالنے سے بھی نہیں چوکتے۔‘‘ عوامی حلقو ں نے ڈی پی او چکوال ، ڈی سی چکوال اور متعلقہ حکام سے پرائیویٹ گاڑیوں سے غیر معیاری گیس سلنڈرز فوری طور پر اتروانے اور مالکان کے خلاف کاروائی کا مطالبہ کیاہے۔تاکہ کسی بھی بڑے واقعے سے بچا جا سکے ۔

ٹیگز :