لاہور،ضلع چکوال کی دو قومی اور چار صوبائی اسمبلی کی نشستوں پرٹکٹوں کا فیصلہ ہو گیا

No Photo

چکوال(بیوروچیف۔ ڈھڈیال نیوز)ماڈل ٹاؤن لاہور میں خادم اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کی صدارت میں ہونے والے پارلیمانی بورڈ کے اجلاس میں ضلع چکوال کی دو قومی اور چار صوبائی اسمبلی کی نشستوں پرٹکٹوں کا فیصلہ ہو گیا۔2013کے الیکشن میں جیتنے والے تمام چھ امیدواروں کو پارٹی ٹکٹ دینے کا اعلان کر دیا گیا۔جبکہ اس موقع پر سابق مشیر وزیر اعلیٰ پنجاب ملک سلیم اقبال کی یقین دہانی پر کہ وہ سردار ذوالفقار دلہہ اور سردار ممتاز ٹمن کو کامیاب کرانے کے لیے سر دھڑ کی بازی لگا دینگے۔سردار ذوالفقار علی خان دلہہ حلقہ پی پی 23پر راضی ہو گئے اور انہوں نے حلقہ این اے 64اور پی پی 21سے کاغذات واپس لینے کی یقین دہانی کرادی۔اس موقع پر شیر ونہار ملک اسلم سیتھی نے شہباز شریف کو تجویز پیش کی کہ سردار فیض ٹمن جو کہ سردار ممتاز ٹمن کے بھانجے ہے اور 2008کے الیکشن میں مسلم لیگ ن کے ٹکٹ پر رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئے تھے۔انہوں نے آزاد امیدوار کی حیثیت سے کاغذات نامزدگی داخل کرا رکھے ہیں۔جس سے مسلم لیگ ن کے سردار ممتاز ٹمن جو کہ فیض ٹمن کے ماموں ہے انکو کافی نقصان پہنچ سکتا ہے۔شہباز شریف نے ملک سلیم اقبال،سردار ممتاز ٹمن اور ملک اسلم سیتھی کو روک لیا اور ہفتے کو سردار فیض ٹمن کو لاہو ربلایا گیا ہے۔جہاں پر پورے عزت و احترام کے ساتھ میاں شہباز شریف فیض ٹمن سے درخواست کرینگے کہ وہ اپنے ماموں سردار ممتاز ٹمن کے حق دستبردار ہو جائیں اور مستقبل قریب میں فیض ٹمن کو اچھی پوزیشن پر ایڈجسٹ کیا جائیگا۔مسلم لیگ ن کے ٹکٹوں کا معاملہ پر امن طریقے سے طے پا جانے کے بعد مسلم لیگ ن کے امیدوار بھرپور طریقے سے آنے والے ایک دو روز میں میدان میں نکلیں گے اور بے شک 25جولائی کو پی ٹی آئی اور مسلم لیگ ن کے درمیان ہر نشست پر کانٹے دار مقابلے کے لیے میدان سج گیا ہے۔

ٹیگز :